لوڈ شیڈنگ کا مسئلہ حل ہو جانا تھا۔مشہور معروف سائنسدان کو بجلی بنانے سے کس نے روک دیا۔پڑھئے اہم حقائق

لوڈ شیڈنگ کا مسئلہ حل ہو جانا تھا۔مشہور معروف سائنسدان کو بجلی بنانے سے کس نے روک دیا۔پڑھئے اہم حقائق

لوڈ شیڈنگ کا مسئلہ حل ہو جانا تھا۔مشہور معروف سائنسدان کو بجلی بنانے سے کس ... 02 جون 2018 (17:37) 5:37 PM, June 02, 2018

معروف سائنسدان ڈاکٹر ثمر مبارک مند کا کہنا ہےکہ :"ہمارا ایک منصوبہ تھا انڈر گراؤنڈ گیسیفیکیشن کا جس کے بورڈ کا میں چیئرمین ہوں اور جس کے لیے ہمارا بورڈ زمہ دار ہے اور یہ ایک منصوبہ صرف ایک سو پچیش بلین ڈالر کا ہے -اور اسکی فنڈنگ ہو رہی ہے 2010 سے 2012 تک 2012 میں وہ مکمل ہونا تھا ان سات سالوں میں اس کی صرف تین بلین روپے پر فنڈنگ ہوئی ہے اور ان پیسوں میں ہم نے وہاں کالونیز بنائی ہیں پاور سٹیشن لگائے ہیں اور ان تین بلین میں ہم نے دس میگا واٹ بجلی بھی بنانی شروع کی اور جس وقت ہم نے بجلی بنائی ہم بڑے خوش تھے اہم نے وزیر اعظم کو لکھا ,چیف جسٹس کو لکھا سب کو بتایا احسن اقبال کو بھی بتایا اس کا نتیجہ کیا نکلا جیسے ہی وہ خط ملا انہیں انہوں نے ہماری فنڈنگ بند کر دی -ہم نے جرم کیا کہ ہم نے بجلی بنا دی بغیر کسی آلودگی کے تھر کے کوئلے سے دس میگا واٹ بجلی بنا دی -جس سے پاکستان کی اکانومی کہیں سے کہیں پہنچ جائے گی -

اس کی وجہ یہ ہے کہ آئی پی پیز بناتے ہیں چوبیس سو یونٹ بجلی اور ان کے آدھے شیئر ہولڈرز بیٹھے ہیں -تو یہ چھ روپے کی بجلی ان کو سوٹ نہیں کرتی جو مہنگی بجلی بناتے ہیں -انہوں نے فنڈنگ بند کر دی ہے حکومت کے نوٹس میں یہ بات لائے ہیں اگر انہوں نء فنڈنگ شروع نہ کی تو یہ پراجیکٹ جو انٹرنیشنل لیول پر چل رہا ہے بند ہو جائے گا -وہ جو پانچ چھ لوگ ہیں پارلیمنٹ میں جو چوبیس روپے کی بجلی بناتے ہیں وہ نہیں چاہتے کہ ان کو کوئی چھ روپے کی بجلی بنا کے بتائے -احسن اقبال صاحب کو کسی نے ڈرا دیا کہ آپ جو فنڈ دے رہے ہیں یہ ڈوب جائیں گے انہوں نے کہا کہ آپ نے جو تھر کے کوئلے سے بجلی بنائی ہے اس کو ہم مان گئے ہیں اب آپ اس کو بند کر دیں - میں نے کہا ہم نے جو تین ملین روپے خرچ کیے ہیں اس کی ذمہ داری کون لے گا انہوں نے کچھ نہیں کہا بس کہہ دیا کہ ان کا فنڈ بند کر دو -انہوں نے فنڈ بند کر دیا اب ہمارے پاس جو پیسے بچے ہیں اس کی ہم اپنی ضرورت کی دو تین میگا واٹ بجلی بنا رہے ہیں اب یہ دو تین مہینے بعد بند ہو جائے گا -ہمارے پاس تنخواہ دینے کے پیسےنہیں بچیں گے -وہاں پہ برانڈ نیو کیمیکل مشینیں لگی ہوئی ہیں پلانٹ لگے ہوئے ہیں اب جب چوکیدار کو پیسے نہیں دیں گے تو لوگ اٹھا کے سب کچھ لے جائیں گے میں ذمہ دار نہیں ہوں - اب جو تھر میں سی پیک کا پراجیکٹ لگ رہا ہے یہ بھی ایک بہت بڑا سکینڈل ہے -یہ پراجیکٹ ہمارے پراجیکٹ سے دو سو کلو میٹر دور لگ رہا ہے یہ کوئلے کا ہے اس کے لیے امپورٹڈ کوئلہ آئے گا چار سو کلو میٹر دور سے اور پھر بجلی بننے کے بعد تین سو پچاس کلو میٹر دور جام شورو بجلی بھیجی جائے گی -اور اگر جو تھر میں کوئلہ مل جائے تو وہ پلانٹ اس کوئلے سے بجلی نہیں بنے گی اس کا کوئی فائدہ نہیں -یہ اس لیے لگایا گیا ہے کہ عام فہم لوگ سمجھیں تھر میں بجلی بننی شروع ہو گئی ہے -یہ ایک بہت بڑا سکینڈل ہے -یہ پلانٹ تھر کے کوئلے سے بجلی نہیں بنا سکتا اور میرا پلانٹ جو چل رہا ہے تھر کے کوئلے سے بجلی بنا رہا اس کے پیسے بند کیے ہوئے ہیں -"

متعلقہ خبریں