نوازشریف سے پاناما لیکس پر قوم کو سچ بتانے کا کہا، اور اداروں پر تنقید سے منع کیا، کیا یہ ان سے۔۔۔۔۔۔۔چوہدری نثار نے پھر ن لیگ کا کٹھا چٹھا کھول دیا۔

نوازشریف سے پاناما لیکس پر قوم کو سچ بتانے کا کہا، اور اداروں پر تنقید سے منع کیا، کیا یہ ان سے۔۔۔۔۔۔۔چوہدری نثار نے پھر ن لیگ کا کٹھا چٹھا کھول دیا۔

نوازشریف سے پاناما لیکس پر قوم کو سچ بتانے کا کہا، اور اداروں پر تنقید سے منع ... 02 جولائی 2018 (10:51) 10:51 AM, July 02, 2018

چوہدری نثار نے کہا ہے کہ اب مسلم لیگ نظریاتی نہیں رہی ہے، مجھ میں منافقت نہیں، نواز شریف سے کہا جو دل کہتا ہے وہی کروں گا۔ان کا کہنا تھا کہ 34 سال ایک شخص کی وفاداری نبھائی، وقت آیا تو ٹیکسلا میں ایسے شخص کو ٹکٹ دیا جو ہمیشہ ن لیگ کا مخالف رہا ہے، جو سیاست دان ہی نہیں، زندگی میں کونسلر تک منتخب نہیں ہوا۔ چوہدری نثار نے کہا لوگ اپنا نظریہ، کردار اور دین و ایمان بیچ دیتے ہیں، لیکن میں نے سیاست سر اٹھا کر کی ہے، کبھی کسی کے آگے جھکا نہیں، عمران خان نے بار بار کہا چوہدری نثار آ جائے ٹکٹ دینے کو تیار ہیں۔انھوں نے کہا سیاست آنی جانی چیز ہے کبھی کم تو کبھی زیادہ ووٹ مل جاتے ہیں، نوازشریف سے پاناما لیکس پر قوم کو سچ بتانے کا کہا، اور اداروں پر تنقید سے منع کیا، کیا یہ ان سے دشمنی تھی یا دوستی۔

ضرور پڑھیں:بنوں کے فرعون کا مقابلہ کرنے کے لیے یہاں سے الیکشن لڑنے کا فیصلہ کیا ہے۔فضل الرحمان ایک مقناطیس ہے جدھر طاقت ہوتی ہے وہاں جا کر ۔۔۔۔۔۔عمران خان کا اکرم درانی کے گڑھ میں ایم ایم اے پر تنقیدی گولہ باری

ضرور پڑھیں:پانی کی قلت دور کرنے کے لیے اگر سمندر کا پانی بھی میٹھا کرنا پڑا تو کریں گے،لیاری کوسمندر کا پانی نیچا کرکے ۔۔۔۔۔۔۔۔بلاول بھٹو زرداری کا اپنی نوعیت کا عجیب و غریب وعدہ

ضرور پڑھیں:علامہ خادم حسین رضوی بھی سیاسی میدان میں سرگرم،کراچی پہنچ گئے،وہ لوٹی ہوئی دولت واپس لاکر بیرونی قرضے اتا ریں گے اور ملک میں وی آئی پی کلچر اور سود کا ۔۔۔۔۔خادم حسین رضوی کا اعلان

ضرور پڑھیں:پی ٹی آئی کا پانچ تنظیموں سے سیٹ ایڈجسٹمٹ کا فیصلہ،جن میں دو مذہبی جماعتیں شامل

مجلس علماءاسلام کی عید ملن پارٹی سے خطاب اور میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے چوہدری نثار نے کہا کہ میں نے ایسا کوئی کام نہیں کیا جس پرشرمندگی ہو۔اللہ نے مجھے سچ بات کرنے کی طاقت دی ہے۔ میں بات کرنے سے ہچکچاتا نہیں۔ انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ میرے خاندان اور میرے خون میں ہے۔ مسلم لیگ ن نظریاتی مسلم لیگ نہیں رہی۔ میں اسلام پسند جماعت کا داعی ہوں۔ آئندہ بھی موقع ملا تو اسلام پسندوں کے ساتھ کھڑا ہوں لیکن پارٹی کے اندر سے میری ٹانگیں کھینچی گئیں۔ انہوں نے کہا کہ میں نے اپنا راستہ لے لیا ہے۔ چوہدری نثا نے کہا کہ شہبازشریف کہتے ہیں کہ ابھی راستے کھلے ہیں، اب کون ساراستہ بچا ہے؟ اتنا کچھ ہونے کے بعد کون سا مثبت بیان ہے جس پراطمینان کا اظہارکروں؟ میں نے مسلم لیگ سے کون سی دشمنی کی ہے؟ بتایا جایا کہ میں نے کونسا خلاف بیان دیا۔ یہ بھی بتایا جائے کہ میں نے کہاں پارٹی کا ساتھ نہیں دیا؟ معاملات میرے بیانات سے نہیں ان کے بیانیئے کے باعث خراب ہوئے۔ میرا بیانیہ یہی تھا کہ فوج اور عدلیہ کے ساتھ نہ لڑیں۔

متعلقہ خبریں