پی ٹی آئی کا پانچ تنظیموں سے سیٹ ایڈجسٹمٹ کا فیصلہ،جن میں دو مذہبی جماعتیں شامل

پی ٹی آئی کا پانچ تنظیموں سے سیٹ ایڈجسٹمٹ کا فیصلہ،جن میں دو مذہبی جماعتیں شامل

پی ٹی آئی کا پانچ تنظیموں سے سیٹ ایڈجسٹمٹ کا فیصلہ،جن میں دو مذہبی جماعتیں ... 02 جولائی 2018 (10:07) 10:07 AM, July 02, 2018

پاکستان تحریکِ انصاف ( پی ٹی آئی ) نے 25 جولائی کو ہونے والے عام انتخابات کے لیے ملک کے مختلف حصوں میں پانچ سیاسی جماعتوں کے ساتھ سیٹ ایڈجسٹمنٹ کا فیصلہ کیا ہے۔

ضرور پڑھیں:بنوں کے فرعون کا مقابلہ کرنے کے لیے یہاں سے الیکشن لڑنے کا فیصلہ کیا ہے۔فضل الرحمان ایک مقناطیس ہے جدھر طاقت ہوتی ہے وہاں جا کر ۔۔۔۔۔۔عمران خان کا اکرم درانی کے گڑھ میں ایم ایم اے پر تنقیدی گولہ باری

ضرور پڑھیں:پانی کی قلت دور کرنے کے لیے اگر سمندر کا پانی بھی میٹھا کرنا پڑا تو کریں گے،لیاری کوسمندر کا پانی نیچا کرکے ۔۔۔۔۔۔۔۔بلاول بھٹو زرداری کا اپنی نوعیت کا عجیب و غریب وعدہ

ضرور پڑھیں:پاک آرمی کے جوانوں نے التر پیک کو سر کرنے والے 3 غیرملکی پیما ﺅ ں میں سے 2 کو بچالیا

ضرور پڑھیں:علامہ خادم حسین رضوی بھی سیاسی میدان میں سرگرم،کراچی پہنچ گئے،وہ لوٹی ہوئی دولت واپس لاکر بیرونی قرضے اتا ریں گے اور ملک میں وی آئی پی کلچر اور سود کا ۔۔۔۔۔خادم حسین رضوی کا اعلان

ان جماعتوں پاکستان مسلم لیگ (ق)، عوامی مسلم لیگ، مجلس وحدت المسلیمین، گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس اور مسلم لیگ (ضیا) شامل ہیں۔ پی ٹی آئی نے راولپنڈی سے قومی اسمبلی کی دو نشستوں این اے 60 اور این اے 62 پر شیخ رشید احمد کی جماعت عوامی مسلم لیگ سے سیٹ ایڈجسٹمنٹ کی ہے۔ ان دونوں حلقوں میں پی ٹی آئی نے اپنا امیدوار کھڑا نہیں کیا اور شیخ رشید احمد کی حمایت کی ہے جو دونوں حلقوں سے قومی اسمبلی کے امیدوار ہیں۔ پی ٹی آئی نے مسلم لیگ (ق) کے ساتھ صوبہ پنجاب کے وسطی ضلعے گجرات سے قومی اسمبلی کی دو نشستوں، چکوال سے ایک نشست اور بہاولپور کی ایک نشست پر بھی سیٹ ایڈجسٹمنٹ کی ہے۔صوبۂ پنجاب کے جنوبی ضلعے بہاولنگر سے پی ٹی آئی نے مسلم لیگ (ضیا) کے ساتھ سیٹ ایڈجسٹمنٹ کی ہے جہاں سے مسلم لیگ (ض) کے سربراہ اعجاز الحق قومی اسمبلی کا انتخاب لڑ رہے ہیں۔ پی ٹی آئی نے صوبہ پنجاب کے ضلع بھکر سے قومی اسمبلی کی ایک نشست پر متحدہ وحدت المسلمین کے حمایت یافتہ ایک آزاد امیدوار کی حمایت کا اعلان کیا ہے اور اس کے مقابلے میں اپنا امیدوار کھڑا نہیں کیا۔اسی طرح پی ٹی آئی نے صوبۂ سندھ کی بعض سیاسی جماعتوں اور اہم شخصیات کے انتخابی اتحاد 'گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس' کے ساتھ صوبے میں 10 سے زائد قومی اور صوبائی اسمبلی کی نشستوں پر سیٹ ایڈجسٹمنٹ کی ہے۔تحریکِ انصاف نے صوبہ خیبر پختونخوا میں جمعیت العلمائے اسلام (س) کے ساتھ اتحاد کیا ہے اور دونوں جماعتیں مختلف نشستوں پر ایک دوسرے کے امیدوار کی حمایت کر رہی ہیں۔

متعلقہ خبریں