بے گھر روھینگیا مسلمانوں کی گھر واپسی ممکن نہیں،انسانی حقوق کے بین الاقوامی گروپ کا انتبا جاری

بے گھر روھینگیا مسلمانوں کی گھر واپسی ممکن نہیں،انسانی حقوق کے بین الاقوامی گروپ کا انتبا جاری

بے گھر روھینگیا مسلمانوں کی گھر واپسی ممکن نہیں،انسانی حقوق کے بین الاقوامی ... 02 جولائی 2018 (09:43) 9:43 AM, July 02, 2018

انسانی حقوق کے بین الاقوامی گروپ ’ریڈ کراس‘ کے چیئرمین پیٹر ماوریر نے ایک بیان میں کہا ہے کہ شمالی میانمار کی راکھین ریاست بنگلہ دیش میں پناہ لینے والےمسلمان پناہ گزینوں کی واپسی کے لیے تیار نہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ میانمار کی فوج کی جانب سے منظم مہم کے تحت راکھین ریاست سے ہزاروں خاندانوں کو بے دخل کر دیا گیا ہے اور ابھی تک وہاں پر واپسی کے لیے حالات سازگار نہیں ہیں۔

ضرور پڑھیں:اسرائیلی فوج کے ٹینک اور توپ خانے شام کی سرحد کے قریب نصب

ضرور پڑھیں:اکتالیس سالہ شخص کی گیارہ سالہ بچی کے ساتھ مبینہ شادی کی خبر نے عوامی حلقوں میں شدید غم وغصے کی لہر دوڑا دی۔

ضرور پڑھیں:اہم مغربی ملک میں ڈاکٹر جنسی درندہ نکلا،ایک نہیں دو نہیں بلکہ درجنوں خواتین کرتا رہا،طریقہ وہ اختیار کیا کہ ھر کوئی چکرا گیا۔

ضرور پڑھیں:خود کش بمبار نے سکھوں اور ہندوؤں کے قافلے میں تباہی مچادی،لاشوں کے ڈھیر لگ گئے۔

قبل ازیں میانمار نے کہا تھا کہ وہ گذشتہ برس بنگلہ دیش فرار ہونے والے 7 لاکھ مسلمانوں کی واپسی کے لیے تیار ہے۔ برما کی حکومت نے دعویٰ کیا ہے کہ اس نے راکھین ریاست میں پناہ گزینوں کی واپسی کے لیے استقبالیہ کیمپ لگائے ہیں مگرحال ہی میں ریڈ کراس کمیٹی کے چیئرمین نے علاقے کا دورہ کیا۔ واپسی پرانہوں نے کہا کہ میرا خیال ہے کہ فی الحال پناہ گزینوں کی روہنگیا واپسی کے لیے حالات سازگار نہیں ہیں تاہم عن قریب ایسا ممکن ہے۔

متعلقہ خبریں