قرض کم کرنے کیلئے چین کی پاکستان کی شاندار مدد دوستی کا حق ادا کر دیا

قرض کم کرنے کیلئے چین کی پاکستان کی شاندار مدد دوستی کا حق ادا کر دیا

قرض کم کرنے کیلئے چین کی پاکستان کی شاندار مدد دوستی کا حق ادا کر دیا 01 جولائی 2018 (23:11) 11:11 PM, July 01, 2018

پاکستان کی وزارتِ خزانہ کے حکام نے اپنا نام نہ ظاہر کرنے کی شرط پر غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کو بتایا کہ یہ قرض پاکستان اور چین کے درمیان ایک سے 2 ارب ڈالر کے قرض کی بات چیت کا نتیجہ ہے جن کے بارے میں رواں برس مئی میں کچھ خبریں بھی منظر عام پر آئی تھیں۔وزارتِ خزانہ کے عہدیدار نے چینی کرنسی کے بارے میں تصدیق کی کہ یہ ہمارے پاس ہے ۔

ضرور پڑھیں:چین پاکستان کی مدد کیلئے پھر تیار۔اسٹیٹ بینک آف پاکستان کا چین کیساتھ بڑا معائدہ

جبکہ دوسرے عہدیدار نے بتایا کہ معاملہ مکمل ہوچکا ہے۔تاہم اس حوالے سے جب وزراتِ خزانہ کے ترجمان سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے اس پر تبصرہ کرنے سے انکار کردیا۔رواں برس اختتام پذیر ہونے والے مالی سال میں پاکستان کے لیے چین کا حالیہ قرض 5 ارب ڈالر کی حد کو عبور کرلے گا۔وزارتِ خزانہ کے دستاویزات کے مطابق مالی سال 18-2017 کے ابتدائی 10 ماہ کے دوران چین نے پاکستان کو دوطرفہ قرض کی مد میں ڈیڑھ ارب ڈالر دیے تھے۔اس کے علاوہ اسی دوران پاکستان نے زیادہ چینی بینکوں سے 2 ارب 90 کروڑ ڈالر حاصل کیے تھے۔

پاکستان کے غیر ملکی کرنسی کے ذخائر گزشتہ برس مئی میں 16 ارب 40 کروڑ ڈالر سے کم ہوکر رواں برس اسی ماہ میں 9 ارب 66 کروڑ ڈالر تک پہنچ گئے ہیں۔

ضرور پڑھیں:ایک نو مسلم خاتون داعش سے جان چھڑا کر اپنے ملک پہنچی تو وہاں ایک نئی مصیبت میں پھنس گئی۔بیچاری کیساتھ وہ ھو گیا جو اس نے سوچا بھی نہ ہو گا۔

ضرور پڑھیں:اہم مغربی ملک میں ڈاکٹر جنسی درندہ نکلا،ایک نہیں دو نہیں بلکہ درجنوں خواتین کرتا رہا،طریقہ وہ اختیار کیا کہ ھر کوئی چکرا گیا۔

ضرور پڑھیں:اسرائیلی فوج کے ٹینک اور توپ خانے شام کی سرحد کے قریب نصب

قبل ازیں اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے ذرائع نے غیر ملکی رساں ایجنسی ریو ٹرز کو بتایا تھا کہ چین نے پاکستان کے ساتھ 10 بلین یوآن (1.57 بلین ڈالر) کی مدد سے غیر ملکی کرنسی ذخائر کو فروغ دینے کے لئے نقد رقم کا تبادلہ کیا ہے ۔

اسٹیٹ بینک آف پاکستان (ایس بی پی) کے ذرائع نے بتایا کہ اسٹیٹ بینک آف پاکستان اور چین کے مرکزی بینک کے درمیان کرنسی کے تبادلہ کا معاہدہ 10 بلین یوآن سے 20 بلین یوآن (3.13 بلین ڈالر) ہے۔

ایک اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے ذرائع نے بتایا کہ "یہ فیصلہ حتمی طور پر دیا گیا ہے." ایک دوسرے ذریعہ نے معاہدہ اور اعداد و شمار کی تصدیق کی ہے۔

متعلقہ خبریں