پانی کی قلت دور کرنے کے لیے اگر سمندر کا پانی بھی میٹھا کرنا پڑا تو کریں گے،لیاری کوسمندر کا پانی نیچا کرکے ۔۔۔۔۔۔۔۔بلاول بھٹو زرداری کا اپنی نوعیت کا عجیب و غریب وعدہ

پانی کی قلت دور کرنے کے لیے اگر سمندر کا پانی بھی میٹھا کرنا پڑا تو کریں گے،لیاری کوسمندر کا پانی نیچا کرکے ۔۔۔۔۔۔۔۔بلاول بھٹو زرداری کا اپنی نوعیت کا عجیب و غریب وعدہ

پانی کی قلت دور کرنے کے لیے اگر سمندر کا پانی بھی میٹھا کرنا پڑا تو کریں ... 01 جولائی 2018 (20:19) 8:19 PM, July 01, 2018

بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ لیاری کوسمندر کا پانی نیچا کرکے بھی پانی پہنچائیں گے، لیاری ہمارا ہے اور ہم لیاری کے ہیں، ہمیں آگے جانا ہے ہم نہیں رکیں گے۔

لیاری کے چیل چوک میں عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے بلاول بھٹو نے کہا کہ ہمارا وعدہ پیپلزپارٹی کاوعدہ ہے لیاری میں پانی کا مسئلہ حل کریں گے۔ میں اپنے پہلے الیکشن کیلئے لیاری کا دورہ کررہا ہوں۔انہوں نے کہا کہ وہ واحد جماعت ہے جوانقلابی پروگرام لیکر آسکتے ہیں جوبے روزگار لوگوں کومالی امداد دے سکیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے پاکستان کوبچانا ہے اور لوگوں کوروزگار فراہم کرنا ہے۔ خواتین کو قرضے دیں گے۔انہوں نے کہا کہ کوئی وال چاکنگ کرکے ہمیں خوفزدہ نہیں کرسکتا۔چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ پانی کی قلت دور کرنے کے لیے اگر سمندر کا پانی بھی میٹھا کرنا پڑا تو کریں گے، یہ میرا وعدہ ہے۔

قبل ازیں لیاری میں پاکستان پیپلز پارٹی کے چئیرمین بلاول بھٹو کے قافلے پر پتھراؤ ۔جب کہ لیاری بہار کالونی میں بلاول بھٹو کے حامی اور مخالفین آمنے سامنے آ گئے۔تفصیلات کے مطابق بلاول بھٹو انتخابی مہم کے سلسلے میں لیاری آئے۔جہاں کارکنان نے شدید احتجاج کیا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق کراچی میں آگرہ تاج کالونی میں جونا مسجد میں پاکستان پیپلز پارٹی کے چئیرمین بلاول بھٹو کے قافلے کو روک لیا گیا۔ اور قافلے کو دوسری جانب موڑ دیا گیا۔اس دوران بلاول بھٹو کے حامیوں اور مخالف گروپوں نے ایک دوسرے پر پتھراؤ کیا۔جب کہ خواتین بھی مٹکے اٹھا کر احتجاج میں شریک ہوئیں۔حالات اتنے خراب ہو گئے کہ پولیس کو مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے شیلنگ کا استعمال کرنا پڑا ۔اس کے علاوہ مظاہرین کی طرف سے " رو بلاول رو " کے نعرے بھی لگائے گئے ہیں۔علاقہ مکینوں کا کہنا ہے کہ کئی عرصے سے پانی کی فراہمی نہیں کی گئی اور ووٹ مانگنے آ گئے ہیں۔یاد رہے کہ لیاری میں پاکستان پیپلز پارٹی کا بہت اثر و رسوخ تھا اور یہاں کے لوگ بھی پیپلز پارٹی کو سپورٹ کرتے تھے تاہم اب لیاری کے لوگ بھی سہولیات فراہم نہ کرنے پرسراپا احتجاج ہیں۔

ضرور پڑھیں:بنوں کے فرعون کا مقابلہ کرنے کے لیے یہاں سے الیکشن لڑنے کا فیصلہ کیا ہے۔فضل الرحمان ایک مقناطیس ہے جدھر طاقت ہوتی ہے وہاں جا کر ۔۔۔۔۔۔عمران خان کا اکرم درانی کے گڑھ میں ایم ایم اے پر تنقیدی گولہ باری

متعلقہ خبریں